جاپان پہلی بار آنے والے غیر ملکیوں کے داخلے کی ممانعت میں توسیع

0
28

حکومت جاپان نے سرحدی پابندیوں کی مدت کو بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے، جس کے نتیجے میں پہلی بار آنے کے خواہشمند غیر ملکیوں کا ملک میں داخلہ عملی طور پر ممنوع ہو گیا ہے۔ ان اقدامات کا مقصد کورونا وائرس کی متغیر قسم اومی کرون کے پھیلاؤ کی روکتھام کرنا ہے۔ وزیراعظم کِشیدافُومیو نے کورونا وائرس کے خلاف نئے اقدامات کا اعلان منگل کے روز کیا۔ ان اقدامات کا اعلان ایک ایسے وقت کیا گیا ہے، جب وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔ جناب کِشیدا نے کہا کہ سرحدی کنٹرول کے لیے نومبر کے اختتام سے نافذ کردہ اقدامات فروری کے آخر تک جاری رہیں گے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ بعض صورتوں میں انسانی ہمدردی اور قومی مفادات کے معاملات پر غور کیا جائے گا۔ حکومت کورونا وائرس ویکسین کے تیسرے ٹیکے کی دستیابی کے لیے انتظامات کی رفتار تیز کرنا چاہتی ہے۔  پریفیکچر کی حکومتوں سے معمر شہریوں کے لیے ویکسین کے تیسرے ٹیکے کی دستیابی کی رفتار بڑھانے کا کہا جائے گا۔ انہیں زیادہ بڑے پیمانے پر ٹیکے لگانے کے مراکز قائم کرنے، اضافی مراکز کی دستیابی یقینی بنانے اور ملک بھر میں موجود ویکسین استعمال کرنے کا کہا جائے گا۔ حکومت موڈرنا ویکسین استعمال کرتے ہوئے طے شدہ منصوبے سے بھی قبل اضافی تیسرے ٹیکے کی عوام کے لیے دستیابی یقینی بنانا چاہتی ہے۔ ویکسین کی ان اضافی خوراکوں کی فراہمی کے لیے انتظامات کر لیے گئے ہیں۔ ویکسین کی تیسری خوراک عوام کے لیے مارچ سے دستیاب ہونا شروع ہو گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here