سپریم کورٹ آزاد کشمیر نے 6 ماہ میں بلدیاتی انتخابات کروانے کا حکم دے دیا

0
60

مظفر آباد: سپریم کورٹ آزاد کشمیر نے چھ ماہ میں بلدیاتی انتخابات کروانے کا حکم دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس سپریم ورٹ آزادکشمیر راجہ سعید اکرم کی سربراہی میں جسٹس خواجہ نسیم احمد ، جسٹس رضا علی خان اور جسٹس یونس طاہر پر مشتمل فل کورٹ نےحکومت کو بلدیاتی انتخبات کروانے کا حکم دیا۔ عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ مظفرآباد حکومت 6 ماہ تک اور اگست 2022ء سے قبل آزادانہ، شفاف اور غیر جانبدارانہ الیکشن کروانے کی پابند ہے۔عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر 45دن میں مردم شماری کے مطابق حلقہ بندیاں کریں۔ آزاد جموں کشمیر الیکشن کمیشن 2017ء کی مردم شماری کے مطابق نئی حلقہ بندیاں کروائے۔ سپریم کورٹ آزاد کشمیر نے ہائی کورٹ کی رٹ کے خلاف اپیل پر فیصلہ سناتے ہوئے بلدیاتی انتخابات کروانے کا حکم دیا۔یاد رہے کہ وزیراعظم آزاد کشمیر سردار عبدالقیوم نیازی نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ایک سال میں آزاد کشمیر میں بلدیاتی انتخابات کروائیں گے۔انہوں نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ آزاد کشمیر میں کئی برسوں سے بلدیاتی انتخابات نہیں کروائے گئے لہذا اب ایک سال کے اندر اندر بلدیاتی انتخابات کروائے جائیں گے۔ پولیس ریفارمز بھی ہمارے ایجنڈے کا حصہ ہے، گڈ گورننس ہماری اولین ترجیح ہوگی۔ اُن کا کہنا تھا کہ مجھےکوئی غلط کام پر مجبور نہیں کر سکتا، عمران خان کا ایجنڈا میرا ایجنڈا ہے۔رواں برس ستمبر میں آزاد کشمیر میں 30 سال بعد بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے لیے راہ ہموار، آزاد کشمیر حکومت نے بلدیاتی انتخابات کے لیے کمیٹی بھی قائم کی گئی تھی۔ وزیر بلدیات و دیہی ترقی خواجہ فاروق آٹھ رکنی کمیٹی کے چیئرمین مقرر کر دیئے گئے۔ وزیر قانون و اطلاعات فہیم ربانی، وزیر تعلیم دیوان چغتائی،مشیر حکومت مقبول احمد کمیٹی میں شامل ہیں۔ مممبر بورڈ آف ریونیو، سیکرٹری قانون، سیکرٹری لوکل گورنمنٹ، سیکرٹری الیکشن کمیشن بھی کمیٹی کا حصہ ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here