کرپشن ختم کرنےکے دعویداربدترین بدعنوانی میں ملوث،شہبازشریف کا حکومت پرالزام

0
40

اسلام آباد:  قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف نے حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ تین ماہ میں کرپشن ختم کرنے کے دعویدار بدترین بدعنوانی میں ملوث، سرعام عوام کی جیبیں کاٹی جا رہی ہیں۔میاں شہباز شریف نے یہ بات قومی اسمبلی کے اجلاس سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہی۔ اسمبلی اجلاس کے دوران آج پھر شور شرابا ہوتا رہا۔ لیگی اراکین نے صورتحال کے پیش نظر اپوزیشن لیڈر کے گرد حصار بنا لیا۔ سپیکر اسد قیصر ارکان کو بار بار خاموشی اختیار کرنے کی تلقین کرتے رہے۔شہباز شریف گزشتہ روز اسمبلی اجلاس کی صورتحال پر سخت برہم نظر آئے، انہوں نے اپنے خطاب میں سپیکر اسد قیصر سے گلے شکوے بھی کئے جبکہ حکومتی اراکین پر ایوان کا تقدس مجروح کرنے کا الزام بھی لگایا۔ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز میری تقریر میں مداخلت کی کوئی مثال نہیں ملتی، تاریخ میں ایسا کبھی نہیں ہوا کہ اپوزیشن لیڈر بات کرے اور مداخلت کی جائے۔انہوں نے سپیکر قومی اسمبلی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اس کا خمیازہ یہ بھگتیں گے اور تاریخ آپ کو ذمہ دار ٹھرائے گی۔ آپ نے ایوان کا تقدس مجروح کروایا ہے۔ اس دوران بھی حکومتی بنچوں سے شور شرابا جاری رہا۔لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ عمران خان مسلط ہوئے تو جی ڈی پی پہلے سال دو اعشاریہ ایک فیصد پر چلی گئی تھی۔ ایک کروڑ نوکریاں تو دور کی بات پچاس لاکھ لوگوں کو بے روزگار کر دیا گیا۔ آج ملک میں بے روزگاری کی شرح تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ تین سالوں میں دو کروڑ افراد غربت کے گہرے گڑھے میں جا گرے ہیں۔ عام آدمی روٹی کو ترس گیا ہے۔ سرکاری ملازمین کی بڑی تعداد غربت کی لکیر سے نیچے جا چکی ہے۔ ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ عمران نیازی نے کیا تھا، قوم پوچھ رہی ہے کہ بجٹ میں کہاں ہے ایک کروڑ نوکریاں اور گھر؟ادھر قومی اسمبلی اجلاس کے دوران حکومتی رکن علی نواز اعوان اور ن لیگی رہنما شیخ روحیل اصغر کے درمیان گرما گرمی دیکھنے میں آئی، علی نواز اعوان نے بجٹ بک شیخ روحیل اصغر کو مار دی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here