پاکستان امریکن سکلڈ وویمن آرگنائزیشن کی جانب سے 60ویں فوڈ پینٹری کا انعقاد معروف بزنس مین ملک نعیم اور میتھیو ایوجین کی خصوصی شرکت

0
339

پاسوو کی جانب سےکوروناکی عالمی وباء کے دوران سارا سال جاری رہنے والی 60ویں ہفتہ وار خوراک کی مفت تقسیم کا سلسلہ گزشتہ بدھ کو بھی جاری رہا

انسان کی جان سب سے قیمتی ہے اور اس خطرناک ماحول میں جب ہم اپنے بچوں کے ہمراہ گھر سے نکل کر اپنے بھائیوں کی خدمت کررہے ہیں تو اس سب کے پیچھے ایک مقصد تھا‘وہ تھا پاکستان‘ ہم دنیا میں پاکستان کا نام روشن کررہے ہیں‘عطیہ شہناز

پاسوو آرگنائزیشن بہت اچھا کام کررہی ہے‘ میرا یہاں آنے کا مقصد بھی ہے کہ میری پوری سپورٹ پاسوو ٹیم کیلئے ہو گی‘ملک نعیم

ہم امریکہ میں رہتے ہیں مگر ہمارے دل پاکستان کیلئے دھڑکتے ہیں اور دھڑکتے رہیں گے اور ہم صرف پاکستان کیلئے ہیں‘ صبیحہ منظور

قائد اعظم نے فرمایا کہ ”وہ قوم کبھی کامیاب نہیں ہو سکتی کہ جس کی خواتین مردوں کے شانہ بشانہ کا م نہ کریں“‘عطیہ شہناز

بروکلین‘ نیویارک (منظور حسین سے)پاکستان امریکن محب وطن کی مریکی سرزمین پر رفاعہ عامہ کی صف اول کی تنظیم پاسوو کی جانب سے کووڈ-19 کی عالمی وباء کے دوران سارا سال جاری رہنے والی 60ویں ہفتہ وار خوراک کی مفت تقسیم کا سلسلہ گزشتہ بدھ کو بھی جاری رہا-تقریب میں شریک افراد نے پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے جبکہ اس موقع پر پاکستان کے قومی ترانے بھی بجائے گئے-پاسوو کی تقریب میں برطانیہ سے آئے ہوئے معروف نوجوان پاکستانی امریکن اور برطانوی بزنس مین نعیم ملک اور بروکلین بارو کے امیدوار مسٹر ڈاکٹر میتھو ایوجین نے بھی شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان امریکن سکلڈ وویمن آرگنائزیشن کی چیف ایگزیکٹو عطیہ شہناز کا کہنا تھا کہ آج فوڈ پینٹری کی 60ویں تقریب ہے جس کا مطلب ہے کہ ہمیں یہ کام کرتے ہوئے ایک سال کا عرصہ ہو چکا ہے اور ہم اپنے بچوں کے ساتھ‘ اپنے شوہر اور اپنی بہنوں کے ساتھ اپنے گھروں سے باہر اپنے لیے نہیں نکلے ہوئے بلکہ اپنے پاکستانی بہن بھائیو ں کی مدد کرنے کیلئے نکلے ہوئے ہیں جو عالمی وباء کی تباہ کاریوں کی زد میں ہیں۔انسان کی جان سب سے قیمتی ہے اور اس خطرناک ماحول میں جب ہم اپنے بچوں کے ہمراہ گھر سے نکل کر اپنے بھائیوں کی خدمت کررہے ہیں تو اس سب کے پیچھے ایک مقصد تھا وہ تھا پاکستان‘ ہم دنیا میں پاکستان کا نام روشن کررہے ہیں کہ امریکی سرزمین پر نہ صرف اپنے پاکستانیوں بھائیوں بلکہ امریکیوں کی بھی مدد کررہے ہیں وہ پاکستان جہاں ہم نے آنکھ کھولی جہاں ہم پلے بڑھے‘جہاں سے تعلیم حاصل کی اور اپنی حاصل کردہ ڈگری سے میں امریکہ آئی اور مجھے فخر ہے کہ یہاں اب میرے پاس ایک بھرپور ٹیم ہے۔ مجھے اپنی کمیونٹی پر بھی فخر ہے جو پاسوو کے ساتھ کھڑی رہی۔ہماری تنظیم نے پاکستان کے امیج کو یہاں اچھے طریقے سے روشناس کیایہاں ہم نے بچوں کو تیار کیا‘14اگست کا جشن آزادی کا دن ہو یا 23مارچ یا 6ستمبر‘ عید قربان کا تہوار ہو یا رمضان المبارک کا بابرکت مہینہ‘ ہم نے اپنے بچوں کو اس کیلئے تیار کیا ہم نے نہ صرف یہ دن منائے بلکہ اس کے پیچھے بھی ایک مقصد تھا اور وہ تھا ہماری نیو جنریشن کو ہماری تاریخ کا بھی پتہ چلتا رہے اور ہماری نئی نسل اسلامی اقدار سے بھی وابستہ رہے اور یہ سارے فنکشن بچوں سے کروانے کا مقصد یہ ہے کہ ان کو بھی پتہ چلے کہ پاکستان کے حصول کیلئے ہمارے بڑوں نے کس کس طرح کی قربانیاں دیں۔ہم نے اپنی تمام تقریبات میں کورونا وباء کی وجہ سے کم لوگوں کی شرکت کا خاص خیال رکھا مگر ہمارا جذبہ کم نہ تھا اور ہم نے بھرپور جذبے سے منایا۔ میں آج پاسوو کے پلیٹ فارم سے ایک پیغام دینا چاہتی ہوں کہ قائد اعظم نے فرمایا کہ ”وہ قوم کبھی کامیاب نہیں ہو سکتی کہ جس کی خواتین مردوں کے شانہ بشانہ کا م نہ کریں“ اور یہی وجہ ہے کہ ہم آپ کی بہنیں ہیں اور مردوں کے شانہ بشانہ کام کر کے پاکستان کا نام فخر سے بلند کرنا چاہتے ہیں اور اپنی کمیونٹی کو اس معاشرے میں ایک خاص حیثیت دلوانا چاہتے ہیں ہم سب ایک ہیں اور پاکستان زندہ باد کے نعرے مرتے دم تک لگاتے رہیں گے۔ہم اس ملک میں رہتے ہیں مگر پاکستان سے ہماری محبت کم نہیں ہو سکتی۔عطیہ شہناز نے برطانیہ سے آئے ہوئے ملک نعیم صاحب کی پاسوو پلیٹ فارم آمد پر انہیں خوش آمدید کہا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے برطانوی امریکن بزنس مین ملک نعیم نے کہا کہ پاسوو آرگنائزیشن بہت اچھا کام کررہی ہے اور میرا یہاں آنے کا مقصد بھی ہے کہ میری پوری سپورٹ پاسوو ٹیم کیلئے ہو گی دیگر مقررین نے اپنے خطابات میں کہا کہ ہم اور ہمارے بچے کس طرح پاکستان کے قوم دن اس سرزمین پر منا رہے ہیں اور یہ قومی دن ہم بہت دھوم دھام سے مناتے ہیں جس کیلئے ہمیں بہت محنت کرنا پڑتی ہے اور یہ ہمارا اپنے وطن سے محبت کا جذبہ ہے یہاں نہ کوئی سندھی ہے نہ کوئی پنجابی نہ کوئی بلوچی نہ کوئی پٹھان‘ یہاں صرف پاکستانی ہیں ہمیں صرف یہ ایک نام یاد رکھنا چاہئے۔پاکستان زندہ باد۔پاسوو کی ممبر صبیحہ منظور نے کہا کہ ہم امریکہ میں رہتے ہیں مگر ہمارے دل پاکستان کیلئے دھڑکتے ہیں اور دھڑکتے رہیں گے اور ہم صرف پاکستان کیلئے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ ہم نے یہاں جتنی بھی محنت کی ہے اللہ نے ہمارے ہر ایونٹ کو کامیاب سے ہمکنار کیا ہے چاہے وہ فوڈ پینٹری کی ڈسٹری بیوشن کا ایونٹ ہو یا پاکستان کے قومی دن منانے کا ایونٹ ہو۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here