زلزلے سے فکُوشیما بجلی گھر میں پانی کے 53 ٹینک اپنی جگہ سے کھسک گئے

0
137

متاثرہ فکُوشیما دائی ایچی ایٹمی بجلی گھر کی منتظم کمپنی کا کہنا ہے کہ جن ٹینکوں میں تابکاری سے آلودہ پانی ذخیرہ کیا گیا ہے ان میں سے 53 ٹینک رواں ماہ قبل ازیں آنے والے شدید زلزلے کے باعث اپنی اصل جگہ سے کھسک گئے ہیں۔ٹوکیو الیکٹرک پاور کمپنی، ٹیپکو نے 13 فروری کو فکُوشیما پریفیکچر کے نزدیکی سمندر میں آنے والے 7.3 میگنی چیوڈ کے زلزلے کے بعد 1 ہزار 74 ٹینکوں کا معائنہ کیا ہے۔ٹیپکو کو معلوم ہوا ہے کہ 53 ٹینک اپنے اصل مقام سے کوئی 3 سے 19 سینٹی میٹر تک کھسک گئے ہیں۔ٹیپکو متاثرہ ری ایکٹروں پر پگھلے ہوئے ایٹمی ایندھن کو ٹھنڈا کرنے کے لئے استعمال شدہ اس پانی کو ٹینکوں میں ذخیرہ کرنے سے قبل صاف کرتی ہے۔ تاہم اس کے باوجود پانی میں تابکار مادے موجود ہوتے ہیں۔کمپنی کے مطابق اسے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ٹینکوں کو ملانے والے پائپوں کا نظام، پانچ مقامات پر، انہیں بنانے والی کمپنی کی تجویز کردہ حد سے زیادہ کھسک گیا ہے۔تاہم اس کا کہنا ہے کہ ابھی تک پائپوں کے نظام میں کوئی شگاف یا دیگر کوئی نقائص نہیں پائے گئے۔ ٹیپکو مزید چھان بین کا ارادہ رکھتی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here