پاکستان اور انڈیا کا ایل او سی پر جنگ بندی پر سختی سے عمل کرنے پر اتفاق

0
139

اکستان اور انڈیا کے ڈائریکٹر جنرل آف ملٹری آپریشنز (ڈی جی ایم اوز) نے ایک دوسرے کے بنیادی معاملات اور تحفظات کو دور کرنے اور ایل او سی پر جنگ بندی پر سختی سے عمل کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

ریڈیو پاکستان کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق دونوں ممالک کے ڈی جی ایم اوز نے ہاٹ لائن رابطے کے قائم کردہ طریقہ کار پر تبادلہ خیال کیا اور لائن آف کنٹرول (ایل او سی) اور دیگر تمام سیکٹرز کی صورتحال کا آزاد، اچھے اور خوشگوار ماحول میں جائزہ لیا۔دونوں فریقین نے اس بات پر زور دیا کہ کسی بھی طرح کی غیر متوقع صورتحال اور غلط فہمی کو دور کرنے کے لیے موجودہ ہاٹ لائن رابطے کے طریقہ کار اور بارڈر فلیگ میٹنگز کا استعمال کیا جائے گا۔یہ پیشرفت ایک ایسے موقع پر ہوئی ہے کہ جب رواں برس فروری میں انڈین فضائیہ کے طیاروں کی پاکستان کے شمالی علاقے بالاکوٹ میں حملے کی کوشش کو دو برس مکمل ہو رہے ہیںواضح رہے کہ دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر فائر بندی کی خلاف ورزیوں کے واقعات وقتاً فوقتاً پیش آتے رہتے ہیں۔ ان واقعات میں عسکری و سویلین ہلاکتوں کے ساتھ ساتھ سرحدی علاقوں میں واقع املاک کو بھی نقصان پہنچتا ہے۔دونوں ممالک سرحدی سیز فائر کی خلاف ورزی کا الزام ایک دوسرے پر عائد کرتے ہیں۔

ڈی جی ایم اوز کا مشترکہ بیان

انڈیا اور پاکستان کی فوج کے ڈی جی ایم اوز کی جانب سے جاری مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ’ایک اچھے ماحول میں لائن آف کنٹرول کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا ہے۔ سرحدوں پر پائیدار امن کے لیے ڈی جی ایم اوز نے ایک دوسرے کے خدشات، جو پُرتشدد واقعات کا باعث بنتے ہیں، کو حل کرنے پر اتفاق کیا۔‘انڈیا اور پاکستان نے 24 اور 25 فروری کی درمیانی شب سے ایل اور سی پر سیز فائر برقرار رکھنے کی حامی بھری ہے۔ دونوں جانب سے یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ لائن آف کنٹرول کے تمام سیکٹرز پر فائر بندی کے حوالے سے تمام معاہدوں اور سمجھوتوں پر سختی سے عمل کیا جائے گا۔مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ہاٹ لائن رابطہ برقرار رکھا جائے گا۔ ’بارڈر فلیگ میٹنگز کے ذریعے ہر قسم کی غلط فہمی دور کی جائے گی۔‘

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here