نو مسلم آرزو کو سندھ ہائیکورٹ میں پیش کردیا گیا

0
184

پولیس کی جانب سے 13 سالہ نو مسلم آرزو راجا کو سخت سیکیورٹی میں سندھ ہائیکورٹ میں پیش کر دیا۔وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری کی جانب سے بھی کیس میں فریق بننے کے لیے سندھ ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا گیا ہے۔وفاقی وزیر شیریں مزاری کی جانب سے بیرسٹر صلاح الدین احمد کے توسط سے کیس میں فریق بننے کی استدعا کی گئی ہے۔نو مسلم 13 سالہ لڑکی آرزو راجا کیس میں  درخواست گزار آرزو کے والدین و دیگر کا کہنا ہے کہ آرزو کی عمر 13 سال ہے شادی نہیں ہوسکی۔واضح رہے کہ اس سے قبل تیرہ سالہ لڑکی آرزوراجا سے شادی کرنے والے ملزم علی اظہر کا مبینہ نکاح سے متعلق کہنا تھا کہ ہم نے آپس میں شادی کی بات کی تھی، آرزو غیر مسلم تھی رشتہ کیسے مانگتا۔میڈیا سے گفتگو کے دوران علی اظہر کا کہنا تھا کہا کہ ہم بچپن سے ایک دوسرے کو جانتے اور پیار کرتے ہیں، لڑکی پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے، جان کا خطرہ ہے، ہم پر رحم کریں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here