ذکرِ مصطفی ﷺ وہ خزانہ ہے جو ربِ کریم تک پہنچانےکی ضمانت ہے”سجادہ نشین عید گاہ شریف پیر محمد حسان حسیب الرحمن

0
237

راوالپنڈی __عید گاہ شریف کے سجادہ نشین و عالم اسلام کے ممتاز مذہبی و روحانی پیشوا پیر محمد حسان حسیب الرحمن نے کہا ہے کہ در حقیقت ذکرِ مصطفی ﷺ وہ خزانہ ہے جو ربِ کریم تک پہنچانے والا اور دین و دنیا کی کامیابی کی ضمانت ہے۔ حضور نبی کریم ﷺ کے اعلیٰ پاک فرمودات پر عمل پیرا ہو کر دین اور دنیا میں شرطیہ کامیابی اور اللہ رحمن کے قرب کو حاصل کیا جا سکتا ہے۔ اسی عشقِ رسولِ مقبول ﷺ اور اتباعِ سنت پاک وشریعتِ مطہرہ کی بدولت حضرت مجدد الف ثانی  کو وہ عظمت و بزرگی عطا ہوئی کہ آج بھی آپ کا نامِ نامی چمک دمک رہاہے۔ آپ کے مکتوبات شریف اور تجدیدِ دین کے عظیم کارنامے کسی تعارف کے محتاج نہیں ہیں۔حضور نبی کریم ﷺ کے انہی غلاموں اور ہمارے سلسلہ عالیہ نقشبندیہ کے ان عظیم بزرگوں کی تقلیدکرتے ہوئے اللہ کریم نے میلادِ مصطفیٰ ﷺ کے سلسلہ میں ایک مرتبہ پھر زندگی میں جمع ہونے کا موقع عنایت فرمایا یہی لمحات ہمای ابدی زندگی کے لئے ہمارا اثاثہ اور در حقیقت ہمارے اپنے لمحات ہیں۔محافل میلاد ِ پاک اور محافل نعت پاک ایسی پاک محافل ہیں جو محبت و عشق ِ رسول ِ مقبول ﷺ کے فروغ کاذریعہ اور بارگاہ ِ ربِ کریم میں مقبول ہیں۔ایسی نورانی محافل میں شرکت سے جہاں اللہ تعالیٰ کی خوشنودی حاصل ہوتی ہے وہاں ہر قسم کے خیر و خوبی، خیر سگالی، محبت و اتفاق، اخوت و ایثار اور دکھ درد میں ایک دوسرے کے کام آنے کے جذبات بھی معاشرے میں فروغ پاتے ہیں۔ آج وطنِ عزیز میں دشمنانِ اسلام جس طرح فرقہ واریت کو ہوا دے کر شیعہ سنی فسادات کروانا چاہتے ہیں اس چال کو ناکام بنانے کے لئے یہی محافل اکسیر کادرجہ رکھتی ہیں اور مسلمانوں کو آپس میں باہم اتحاد و اتفاق مہیا کرتی ہیں۔ ہمارا دینِ متین اسلام سراسر سلامتی کا دین ہے جس میں ایک دوسرے سے ملنے کے آغاز میں ہی آپس میں سلامتی بھیجی جاتی ہے اور جس میں انسانی جان، مال، خون اورآبرو کی حرمت ہے۔وطنِ عزیز میں فرقہ واریت کو ہوا دینے والے عناصر کا دینِ متین اسلام سے کوئی تعلق نہیں اور نہ ہی وہ وطنِ عزیز کے خیر خواہ ہو سکتے ہیں۔عشق ِ نبی رحمت ﷺ کے جہاں انسانی زندگی پر بے شمار فیوض و برکات ہوتے ہیں وہاں اس محبت کو پا لینے والا نہ کسی کیلئے برا سوچتا ہے اور نہ اس کی ذات کسی کیلئے باعث تکلیف ہوتی ہے بلکہ اس کا وجود دوسروں کیلئے سراپا خیر بن جاتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز عید گاہ شریف میں منعقدہ ماہانہ محفلِ بارہویں شریف کے موقع پر منعقدہ امامِ ربانی حضرت شیخ احمد سر ہندی فاروقی المعروف حضرت مجدد الف ثانی  کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ربِ کریم قرآنِ کریم میں حضور نبی کریم ﷺ کی ذاتِ مبارکہ کو بہترین مثالِ تقلید اور اتباع قرار دے رہا ہے اور آپ ﷺ کی بارگاہِ اقدس کے آداب سکھا رہا ہے کہ میرے حبیب ﷺ کی بارگاہِ اقدس میں اپنی آوازیں پست رکھا کرو۔ محفل بارہویں پاک سے کثیر تعداد میں علما ئے کرام جن میں حافظ محمد اقبال رضوی، علامہ عثمان غنی، خواجہ وجاہت جمیل،علامہ محمد فاروق احمد عثمانی، مفتی فیصل حسین نقشبندی و دیگر نے بھی خطاب کیا جب کہ دربار رسالت مآب ﷺ میں نعت پاک کا نذرانہ حافظ عبدالمتین عباسی، تصدق رسول، حافظ محمد رضوان، حافظ عامر شہزاد، حافظ غلام مصطفیٰ و دیگر نے پیش کیا۔ محفل بارہویں پاک کے اختتام پر پیر محمد نقیب الرحمن نے وطن عزیز کی سلامتی، خوشحالی، ترقی، افواج پاکستان کی سر بلندی، اتحاد بین المسلمین کیلئے خصوصی دعا کی جس کے بعد وسیع و عریض لنگر کا اہتمام بھی تھا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here