برطانیہ میں کورونا کی دوسری لہر، سخت پابندیاں عائد، خلاف ورزی پر10ہزار پونڈ تک جرمانہ

0
85

لندن : برطانیہ میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کے بعد سخت پابندیاں عائد کر دی گئی ہیں جن کی خلاف ورزی پر دس ہزار پائونڈ تک جرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔ جو برطانوی شہری وائرس کے پھیلاؤ کی روک تھام میں تعاون نہ کرتے ہوئے خود کو الگ تھلگ نہیں رکھیں گے ان پر دس ہزار پائونڈ کا جرمانہ عائد کیا جائے گا۔برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے کہا ہے کہ وائرس کی دوسری لہر کے بعد انگلینڈمیں نئی پابندیاں عائد کی جا رہی ہیں۔نئی پابندیوں کے مطابق 28 ستمبر سے کورونا سے متاثرہ ہر شخص کی قانونی ذمہ داری ہوگی کہ وہ خود کو دیگر افراد سے الگ تھلگ رکھے۔ جبکہ مختلف گھرانوں سے تعلق رکھنے والے صرف چھ افراد اکھٹے ہو سکیں گے جس کا اطلاق رواں ہفتے سے کر دیا گیا ہے۔ بورس جانسن کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے وائرس سے نمٹنے کا واحد طریقہ یہی ہے کہ تمام شہری اصولوں کی پابندی کریں اور وائرس سے متاثرہ افراد خود کو آئسولیشن میں رکھیں۔ بیان میں متنبہ کیا گیا ہے کہ نئی پابندیوں کو نظر انداز نہکیا جائے اور وائرس پھیلانے کے خدشے کی صورت خود کو آئسولیٹ کرنا قانونی ذمہ داری ہے۔ اگر برطانوی قوم ادارہ صحت ’این ایچ ایس‘ کی جانب سے کسی بھی فرد کو آئسولیشن میں رہنے کی ہدایت کی گئی ہے تو ایسا کرنا اس کی قانونی ذمہ داری ہوگی، خلاف ورزی کی صورت میں جرمانہ ادا کرنا پرے گا۔ دوسری طرف لندن میں سیکڑوں افراد کورونا کے دوسرے متوقع لاک ڈاؤن کے خلاف سڑکوں پر آگئے۔ مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ دوسرا لاک ڈاؤن نہ لگایا جائے، احتجاج کے دوران مظاہرین نے بینرز اٹھا رکھے تھے جن میں کورونا کو “ڈیجیٹل جیل” کورونا ایک دھوکا اور “خوف نہیں آزادی” کےنعرے درج تھے۔ ٹریفلگر اسکوائر پر مظاہرین نے پولیس سے الجھنےکی بھی کوشش کی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here