ملک بھر میں یومِ عاشور کے جلوس برآمد

0
194

یوم عاشور کے موقع پر ملک کے مختلف شہروں کے حساس علاقوں میں موبائل فون سروس بند رہے گی۔

ملک بھر میں نواسۂ رسول ﷺ حضرت امام حسین رضی اللّٰہ عنہ اور اُن کے جانثار ساتھیوں کی عظیم لازوال قربانی کی یاد میں عاشورہ محرم کے جلوس نکالے جا رہے ہیں۔ ملک بھر کے چھوٹے بڑے مختلف شہروں میں یومِ عاشور کے موقع پر تعزیے اور شبیہ ذوالجناح کے جلوس خصوصی سیکیورٹی انتظامات میں برآمد ہوئے ہیں جو اپنے مقرر کردہ راستوں پر گامزن ہیں۔ جلوسوں میں شہدائے کربلا ؓ کی یاد میں نوحے اور مرثیے پڑھے جا رہے ہیں، ان جلوسوں کے اختتام پر ملک بھر میں رات میں شامِ غریباں بپا کی جائیں گی۔

راول پنڈی میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس برآمد

راول پنڈی میں یومِ عاشور کا مرکزی جلوس امام بارگاہ عاشق حسین تیلی محلے سے برآمد ہو گیا، مرکزی جلوس میں امام بارگاہ کرنل مقبول حسین اور دربار شاہ چن چراغ سمیت 3 مزید جلوس شامل ہیں۔جلوس کمیٹی چوک، اقبال روڈ، ٹرنک بازار، فوارہ چوک سے ہوتا ہوا امام بارگاہِ قدیم پر اختتام پذیر ہو گا۔راول پنڈی پولیس کے ترجمان کے مطابق جلوس کی سیکیورٹی پر 3600 پولیس اہلکار تعینات ہوں گے، جبکہ جلوس کے دوران موبائل فون سروس بند رہے گی۔

پشاور میں جلوسِ عاشورہ

پشاور میں آج یوم عاشور انتہائی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا جا رہا ہے، شہر میں شبہیہ ذوالجناح کے 12 جلوس برآمد ہوئے، اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔پشاور کے مختلف علاقوں سے بھی شبِ عاشور کے جلوس برآمد ہو کر اذانِ فجر کے ساتھ اختتام پذیر ہوچکے ہیں۔پشاور میں شبیہ ذوالجناح کا پہلا جلوس امام بارگاہ آغا سید علی شاہ رضوی چڑوی کوبان سے برآمد ہوا۔شہر کے مختلف علاقوں سے یومِ عاشور کے 12 جلوس برآمد ہوں گے جو مقررہ راستوں سے ہوتے ہوئے نمازِ مغرب سے پہلے اپنی اپنی امام بارگاہوں میں پہنچ کر اختتام پزیر ہوں گے۔جلوسوں کے راستوں پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں جبکہ امام بارگاہوں اور جلوس کی طرف جانے والے راستوں کو سیل کر دیا گیا ہے۔جلوسوں کی نگرانی کے لیے سی سی ٹی وے کیمرے نصب کیے گئے ہیں، جلوس کے راستوں اور قریبی علاقوں میں موبائل فون سروس بند رہے گی، جبکہ فضائی نگرانی بھی کی جائے گی۔

کوئٹہ میں جلوس برآمد

کوئٹہ میں عاشورۂ محرم کا جلوس برآمد ہو گیا ہے، اس حوالے سے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔عاشورۂ محرم کا 3 دستوں پر مشتمل جلوس کوئٹہ میں علم دار روڈ پر رحمت اللّٰہ چوک سے برآمد ہوا، جس کی قیادت بلوچستان شیعہ کانفرنس کے صدر سید داؤد آغا، رکنِ بلوچستان اسمبلی قادر علی نائل اوردیگر رہنماء کر رہے ہیں۔اس موقع پر ایڈیشنل آئی جی پولیس عبدالرزاق چیمہ، ڈپٹی کمشنر اورنگزیب بادینی اور دیگر متعلقہ حکام بھِی موجود ہیں۔عاشورہ محرم کے جلوس کی سیکیورٹی کے حوالے سے سخت انتظامات کیئے گئے ہیں، جلوس کے روٹ پر تمام دکانیں اور کاروباری مراکز بند ہیں جبکہ جلوس کی طرف جانے والے تمام راستے بھی سیل کر دیئے گئے ہیں۔اس موقع پر شہر میں سیکیورٹی خدشات کے پیشِ نظر موبائل فون اور انٹرنیٹ سروس بھی بند ہے۔میڈیا سے بات چیت میں ایڈیشنل آئی جی پولیس کا کہنا تھا کہ عاشورہ کے جلوس کے لیے پولیس، لیویز اور ایف سی کے 10 ہزار سیکیورٹی اہلکار تعینات ہیں۔جلوس کے راستوں کی سرچنگ اور سوئپنگ کر دی گئی ہے اور اس کے روٹ پر عمارتوں پر اسنائیپرز اور سیکیورٹی اہلکار تعینات ہیں۔کوئٹہ میں پاک فوج کی 3 بٹالین بھی اسٹینڈ بائی ہیں، جبکہ 2 ہیلی کاپٹروں کے ذریعے جلوس کی فضائی نگرانی بھی کی جا رہی ہے اور اس کی نگرانی کے لیے کنٹرول رومز قائم کیئے گئے ہیں۔عاشورہ کا جلوس مغرب سے پہلے اختتام پذیر ہو جائے گا، تاہم سیکیورٹی خدشات کے باعث موبائل فون سروس رات 12 بجے تک بند رہے گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here