سیالکوٹ کی صبا جنس تبدیل کرانے عدالت پہنچ گئی

0
129

لڑکی کی جنس تبدیلی درخواست پر بورڈ تشکیل دینے کا حکم

لاہور ہائیکورٹ نے لڑکی کی جنس تبدیلی کیلئے درخواست پر بورڈ تشکیل دینے کا حکم دیدیا اور چیف سیکریٹری سمیت دیگر فریقین کو جواب داخل کرانے کیلئے مہلت بھی دے دی ۔ لاہور ہائیکورٹ کے جج جواد حسن نے سیالکوٹ کی صباء کی درخواست پر سماعت کی جس میں درخواست گزار لڑکی نے اپنی جنس تبدیلی کیلئے اجازت دینے کی استدعا کی جس پر چیف سیکرٹری سمیت دیگر حکام نے جواب داخل کرانے کیلئے عدالت سے مہلت دینے کی استدعا کی جسے منظور کرلیا گیا۔ عدالت نے محکمہ صحت سے لڑکی کے لڑکے کے لئے آپریشن کرانے کے متعلق رپورٹ طلب کر لی۔ جسٹس جواد حسن نے یہ نکتہ اٹھایا کہ عدالت کسی کو جنس تبدیل کرانے کی کیسے اجازت دے سکتی ہے اور کس قانون کے تحت ایسا کیا جاسکتا ہے؟ جنس تبدیلی کی خواہشمند لڑکی کے وکیل نے بتایا کہ درخواست گزار میں بچپن میں مردانہ خصوصیات ظاہر ہوئیں اور اسی وجہ سے اس نے خود کو ایک مرد کے طور پر متعارف کرایا ہے۔ وکیل نے استدعا کی کہ درخواست گزار لڑکی کو جنس تبدیل کرنے کی اجازت دی جائے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here