ووٹنگ بذریعہ ڈاک امریکی انتخابات مشکوک

0
175

صدر ٹرمپ کی جانب سے پوسٹل سروس کے وسائل میں کمی اور اخراجات میں کٹوتیوں کی وجہ سے صدارتی انتخابات میں ڈاک کے ذریعے ڈالے جانے والے ووٹوں کی بروقت ترسیل کی پوسٹل سروس کی صلاحیت متاثر ہو گی
ڈاک کے ذریعے ہونے والی رائے دہی سے 2020ء کے صدارتی انتخابات تاریخ کے ناقص اور دھوکہ دہی کے شکار انتخابات ہونگے‘جب تک لوگ سلامتی کیساتھ ووٹ نہ دے سکیں انتخابات موخر کردینے چاہئیں‘صدرٹرمپ
ابتدائی سرویز کے مطابق جوبائیڈن کو صدرڈونلڈ ٹرمپ پر برتری حاصل ہے‘ 3نومبر میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں ڈاک کے ذریعے ارسال کئے گئے ووٹوں کو بروقت الیکشن حکام تک پہنچایا جائیگا‘پوسٹ ماسٹر جنرل
نیویارک (منظور حسین سے):___امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں نومبر میں ہونے والے صدارتی انتخابات کو موخر کرنے کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈاک کے ذریعے ہونے والی رائے دہی سے 2020ء کے صدارتی انتخابات تاریخ کے سب سے زیادہ ناقص اور دھوکہ دہی کے شکار انتخابات ہوں گے-ان کا کہنا تھا کہ جب تک لوگ مناسب‘درست اور محفوظ انداز میں سلامتی کے ساتھ ووٹ نہ دے سکیں تب تک انتخابات موخر کر دینے چاہئیں -دوسری جانب ڈیموکریٹ پارٹی کو خدشہ ہے کہ صدر ٹرمپ کی جانب سے پوسٹل سروس کے وسائل میں کمی اور اخراجات میں کٹوتیوں کی وجہ سے 3نومبر کو ہونے والی صدارتی انتخابات میں ڈاک کے ذریعے ڈالے جانے والے ووٹوں کی بروقت ترسیل کی پوسٹل سروس کی صلاحیت متاثر ہو گی-ڈیموکریٹک رہنماؤں کے مطابق ایوان نمائندگان کے ہنگامی طور پرطلب کئے جانے والے اجلاس میں پوسٹ آفس کے اخراجات اور آپریشنز میں کٹوتی سے باز رکھنے کیلئے بل لایا جائے گا-یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے صدر ٹرمپ نے کورونا وائرس سے پیدا ہونے والے بحران کے پیش نظر سرکاری اداروں کو دی جانے والی ہنگامی امداد میں پوسٹل سروس کو پچیس ارب ڈالر کی امداد کی فراہمی موخر کر دی تھی-صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ان کا مقصد الیکشن میں ڈاک کے ذریعے ووٹ ڈالنے کے عمل کو مشکل بنانا ہے تاکہ دھاندلی نہ ہو سکے-دوسری جانب امریکہ کے پوسٹ ماسٹر جنرل نے کہا ہے کہ نومبر میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں ڈاک کے ذریعے ارسال کئے گئے ووٹوں کو بروقت الیکشن حکام تک پہنچایا جائے گا-اامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ بیلٹ باکس کے ذریعے ووٹوں کی گنتی کے لیے ہماری تیاری مکمل نہیں ہے اس لیے اس عمل میں کئی ہفتے یا مہینے لگ سکتے ہیں۔صدر ٹرمپ نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ 51 ملین سے زائد بیلیٹنگ کے لیے ہماری تیاری نہیں ہے، ووٹوں کی گنتی وقت پر نہ ہونے کی وجہ سے امریکا کو پشیمانی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ صدارتی انتخاب میں ووٹوں کی گنتی کے لیے کئی ہفتے یا مہینے لگ سکتے ہیں۔صدر ٹرمپ نے کہا کہ ووٹوں کی بروقت گنتی جمہوریت کے لیے انتہائی سنجیدہ مسئلہ ہے۔امریکی صدر نے اس خدشے کا اظہار بھی کہا کہ انتخابات میں بیرونی عناصر کی جانب سے ہیکنگ بھی کی جاسکتی ہے اور یہ بھی کہا کہ انتخابات میں گنتی کے دوران سائبر حملے کی وجہ سے پریشان ہوں۔خیال رہے کہ امریکا میں 3 نومبر کو صدارتی انتخابات ہونے جا رہے ہیں جس میں صدر ٹرمپ کے مد مقابل ڈیموکریٹک پارٹی کے جو بائیڈن ہیں۔امریکا میں کورونا وبا کو بہتر طریقے سے ہینڈل نہ کرنے اور بے روزگاری کی شرح میں اضافے کے بعد جو جوبائیڈن کو ابتدائی سرویز میں صدر ٹرمپ پر برتری حاصل ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here