وزیراعظم نے خاتون وکیل کے اغوا کا نوٹس لے لیا

0
283

سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں نظر آنے والی خاتون وکیل اوکاڑہ کے علاقے دیپالپور کی رہائشی نکلی۔متاثرہ خاتون کے مطابق اسے نامعلوم افراد نے اغوا کیا اور چند دن بعد وہاڑی کے علاقے میلسی میں سڑک پر پھینک دیا۔مشیر داخلہ شہزاد اکبر کے مطابق وزیراعظم نے خاتون وکیل کے اغوا کا نوٹس لیتے ہوئے پنجاب پولیس کو انصاف فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔متاثرہ خاتون ایڈووکیٹ نسرین ارشاد چھ بچوں کی ماں ہے، جس نے سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں کہا ہے کہ انہیں دیپالپور کچہری میں ایک وکیل کے دفتر سے 14 اگست کو اغوا کیا گیا۔نامعلوم افراد نے کئی دن حبس بے جا میں رکھا اور پھر میلسی میں سڑک کنارے پھینک دیا، وہ نہیں جانتی کہ اغوا کار کون تھے اور اُن کے کیا عزائم تھے۔ویڈیو وائرل ہوئی تو پولیس حرکت میں آئی، خاتون کو میلسی سے تحویل میں لے کر تحصیل ہیڈکوارٹر اسپتال دیپالپور منتقل کر دیا اور ڈی پی او عمر سعید ملک نے خاتون وکیل کی عیادت کی۔اُن کا کہنا تھا کہ خاتون کے اغوا کا مقدمہ ان کے بیٹے کی مدعیت میں تھانہ سٹی دیپالپور میں درج تھا، خاتون وکیل کے بیانات کی روشنی میں تفتیش آگے چلے گی۔آئی جی پنجاب کی ہدایت پر ایس پی انویسٹی گیشن شمس الحق کی سربراہی میں 2 ڈی ایس پیز پر مشتمل خصوصی انکوائری ٹیم بھی تشکیل دے دی گئی ہے۔اس سے قبل اوکاڑہ کےعلاقے دیپالپورکی تحصیل کہچری سےچندروزقبل مبینہ طور پر اغوا ہونے والی خاتون وکیل میلسی سے ملی تھی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here