کووڈ19نیویارک میں موجود ہے‘تمام نیویارکرز ماسک پہنیں ویکسین لگوائیں‘معاشرے کو محفوظ بنائیں Ashwin Vasan , Ted Long.


کووڈ 19کیلئے ریپڈ ٹیسٹ انتہائی اہمیت کا حامل ہے تاکہ لوگوں کی زندگیوں کو محفوظ بنایا جاسکے‘ ریپڈ ٹیسٹ کا دائرہ کار نیویارک بھر میں بڑھا دیا گیا ہے‘نیویارک بھر میں 375لوکیشن پر ریپڈ ٹیسٹ کی سہولیات موجود ہیں جہاں منٹوں میں PCRٹیسٹ جاری ہیں یہ سب لوگوں کی سہولت کیلئے کیا جا رہا ہے‘مسٹر ٹیڈ لانگ

کووڈ19کے نئے جرثومے نے نیویارک کے لوگوں کو دوبارہ سے اپنی تحویل میں لینا شروع کر دیا جس کیلئے تمام تر حفاظتی تدابیر کی جا رہی ہیں‘ ویکسی نیشن اور بوسٹر کی ڈوز سے آپ تمام تر محفوظ ہو جائیں گے ‘لوگ ماسک پہننا جاری رکھیں‘مسٹر ایشون وسان

کوئنز‘نیویارک (منظور حسین سے)

نیویارک سٹی ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے کمشنر ایشون وسان اور نیویارک شہرٹیسٹ اینڈ ٹریس کارپس کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرڈاکٹر ٹیڈلانگ نے کہا ہے کہ کووڈ 19کے گھروںمیں کئے جانے والے ٹیسٹ کروناکے پھیلاﺅ اور اس کی افادیت میں اہم کردار ادا کررہے ہیں اس لیے نیویارک کے لوگوں کو گھروں میں کئے جانے والے ٹیسٹ کے سلسلے کو معمول بنایا جائے تاکہ اس موذی مرض کو ابتدائی مرحلے میں ہی تشخیص کی جاسکے اور یوں لوگ ابتدائی مرحلے ہی میں اپنا بہتر علاج کر سکیں۔وہ گزشتہ دنوں سٹی ہال میں میئر آفس کے ایتھنک میڈیا کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر مسٹر ہوزے بیونا کے ہمراہ سٹی ہال میں مشترکہ پریس کانفرنس کررہے تھے۔ڈاکٹرٹیڈ لانگ کا کہنا تھا کہ اگر آپ کوکرونا کی علامات ظاہر ہو چکی ہیں توکووڈ 19کیلئے اپنے فون سے212 ملائیں ہم آپ کو تمام میڈ کیشن آپ کے گھر کے پتے پر بھیجیں گے۔ایتھنک میڈیا کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کمشنر ایشون کا کہنا تھا کہ نیویارک کا ایتھنک میڈیا انتہائی اہمیت کا حاصل ہے کووڈ 19کی تباہ کاریوں کو محدود کرنے اور قیمتی معلومات دوسروں تک پہنچانے میں ایتھنک میڈیا نے اہم رول ادا کیا۔ اس موقع پر مسٹر ٹیڈ لانگ کا کہنا تھا کہ کووڈ 19کی ٹریٹمنٹ ان دنوں ہمارا بنیادی کام ہے جہاں جتنے لوگوں کی تشخیص جاری رہے گی ہمارا معاشرہ اتنی جلدی ہی اس مرض سے چھٹکارا حاصل کرے گا۔انکا کہنا تھا کہ کووڈ 19کیلئے ریپڈ ٹیسٹ انتہائی اہمیت کا حامل ہے تاکہ آپ کی زندگیوں کو محفوظ بنایا جاسکے۔مسٹر ٹیڈ لانگ کا کہنا تھا کہ ریپڈ ٹیسٹ کا دائرہ کار ہم نے نیویارک بھر میں بڑھا دیا ہوا ہے جہاں آج نیویارک بھر میں 375لوکیشن پر ریپڈ ٹیسٹ کی سہولیات موجود ہیں جہاں منٹوں میں پی سی آر ٹیسٹ جاری ہیں یہ سب لوگوں کی سہولت کیلئے کیاجا رہا ہے۔نہوں نے بتایا کہ شہر بھر میں ہمارے موبائل یونٹس مستعدی سے لوگوں کی بہتری کیلئے کام کررہے ہیں یہاں تک کہ نیویارک کے لائبریریز میں بھی فری ہوم ٹیسٹ کی کٹس موجود ہیں ان کاکہنا تھا کہ ایک ڈاکٹر ہونے کی وجہ سے بڑا کام ہی اپنے لوگوں کے مرض کی تشخیص ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ابتدائی مراحل میں کووڈ 19کی تشخیص سے لوگ ہسپتال جانے سے بچ جاتے ہیں ۔مسٹر ٹیڈ لانگ کا کہنا تھا کہ نیویارک شہر میں 930مساجد‘ چرچ سیناگوگ اور عبادت گاہیں کام کررہی ہیں ۔جہاں یہ ٹیسٹ کٹس موجود ہیں ان کٹس کے استعمال کے بدلےا اگر آپ کا ٹیسٹ پازیٹو آگیا ہے تو 212 پر کال کریں آپ کی زندگی بچانے کیلئے ہم میڈیکیشن آپ کے گھر بھیجیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر آپ کی طبعیت صحیح نہیں تو گھر پر موجود ٹیسٹ کٹ کو استعمال کریں اور اگرآپ پازیٹو ہیں تو دیر نہ کریں ہمیں کال کریں یا اپنے ڈاکٹر سے رابطہ کریں۔ڈاکٹرٹیڈلانگ کا کہنا تھا کہ دوسرا طریقے ہمارے شہر بھر میں موجود ہے ٹیسٹ کی سہولت کے موبائل یونٹس پر تشریف لائیں۔ان کاکہنا تھا کہ ان حفاظتی تدابیر کے استعمال کرنے سے آپ لوگ ہسپتال جانے سے ابتدائی مراحل ہی میں بچ جائیں گے۔ صحت عامہ کے شعبے سے تعلق رکھنے والے نیویارک شہر کے ٹاپ ہیلتھ ایڈوائزرز کا کہنا تھا کہ آج نیویارک کے ہسپتالوں میں کووڈ 19کے مریضوں کا رش نہیں آج صورتحال مختلف ہو چکی ہے۔ہماری کوشش ہے کہ آپ لوگوں کو ہسپتال سے دور رکھیں۔مسٹر ایشون وسان کا کہنا تھا کہ کووڈ19کے نئے جرثومے نے نیویارک کے لوگوں کو دوبارہ سے اپنی تحویل میں لینا شروع کر دیا ہے جس کیلئے تمام تر حفاظتی تدابیر کی جا رہی ہیں ۔انکا کہنا تھا کہ ویکسی نیشن اور بوسٹر کی ڈوز کے استعمال سے آپ ان تمام تر حملوں سے محفوظ ہو جائیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ کووڈ نیویارک میں آج بھی موجود ہے یہ کہیں نہیں گیا مگر جو نقصان زندگیوں کو یہ وائرس پہنچا چکا وہ آج موجود نہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ماسک پہننا جاری رکھیں ۔سب وے میں بھی ماسک پہنیں۔ڈاکٹر وسان کا کہنا تھا کہ کووڈ وائرس لوگوں پر ویکسی نیشن کروانے کی وجہ سے اس فوری اثر انداز نہیں ہو رہا ہے ویکسی نیشن نہ کروانے والوں پر ہو رہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ویکسی نیشن کا مطلب یہ نہیں کہ آپ کو کووڈ نہیں ہو گا مگرویکسی نیشن کے عمل سے آپ شدید بیمار اور ہسپتال داخل ہونے سے بچ جائیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ وہ آج بھی تمام نیویارکرز کو کہتے ہیں کہ وہ ماسک پہنیں ۔ڈاکٹر وسان کاکہنا تھا کہ ہم نے اپنے کارکنان کی زندگیوں کا بھی خیال رکھتے ہوئے ماسک پہننا چاہئے تاکہ ہم سب کی زندگیاں اور صحت محفوظ رہے۔ ڈاکٹروسان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت کو کمیونٹیز کی زندگیاں محفوظ بنانے کیلئے پبلک ہیلتھ سسٹم میں زیادہ سے زیادہ فنڈنگ کرنا ہو گی۔ان کا کہنا تھاکہ سکولوں میں ماسک پہننے کی ضرورت نہیں کیونکہ بچوں میں یہ وائرس اتنا متحرک نہیں۔مونکی پاکس وائرس کے حوالے سے انہوں نے بتایاکہ مونکی پاکس سیکس کرنے والوں میںجلدی بڑھ رہا ہے اس لیے ہر قسم کی حفاظتی تدابیر استعمال کریں جس کیلئے کنڈوم کا استعمال اور دیگر حفاظتی تدابیر شامل ہیں۔


Leave a Reply

Your email address will not be published.