TT Ads

جامعہ محمد یہ رضویہ کے سینئر رکن علامہ محمد بشیر نے افطار سے قبل امت مسلمہ اور کمیونٹی کی کامیابی کے لیے خصوصی دعا بھی کروائی‘افطار ڈنر میں عزیز بٹ اور جاوید خان کے علاوہ سینکڑوں لوگوں نے شرکت کی

مستقبل قریب میں یہاں ہم ایک مدرسہ بھی بنائیں گے تاکہ ہمارے بچے دینی تعلیم حاصل کر سکیں‘ اس کار خیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں‘ہمارا فرض بنتا ہے کہ ہم اللہ کے گھروں کو آباد رکھیں‘ثمر خان

بروکلین‘ نیویارک (منظور حسین سے):___پاکستانی امریکن کمیونٹی کی ممتاز نوجوان شخصیت معروف رئیلٹر بارو پارک بروکلین میں واقع محمدیہ رضویہ کے جنرل سیکرٹری محمد ثمر اور ان کے والد گرامی حاجی صابر خان کی جانب سے جامع محمدیہ رضویہ میں 14ویں سالانہ افطار ڈنر کا انعقاد بڑی محبت اور ایمانی جذبہ کے ساتھ کیا گیا۔جامع محمدیہ رضویہ کے دلکش اور کشادہ ہال میں اس خوبصورت گرینڈ افطار ڈنر میں جہاں محمد ثمر کے دوست و احباب نے مکمل طور پر شرکت کی وہاں سینکڑوں نمازیوں کے علاوہ فیملیز نے بھی اس افطار ڈنر میں شرکت کی۔افطار ڈنر کے شرکاء اور نمازیوں سے خطاب کرتے ہوئے جامع محمد یہ رضویہ کے جنرل سیکرٹری ثمر خان نے کہا کہ اس جامع محمدیہ کو آ پ دیکھ رہے ہیں جہاں نمازیوں کیلئے بہتر ین انتظام کیا گیا ہے وال ٹو وال کارپٹ اور قرآن پاک پڑھنے کی تمام سہولیات بہتر انداز میں مہیا کی گئیں ہیں اور انشاء اللہ مستقبل قریب میں یہاں ہم ایک مدرسہ بھی بنائیں گے تاکہ ہمارے بچے دینی تعلیم حاصل کر سکیں۔ثمر خان نے تمام کمیونٹی سے اپیل کی ہے کہ وہ اس کار خیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور جامع محمد یہ رضویہ کو بہت آگے لے کر جائیں تاکہ امریکہ میں بسنے والے پاکستانیوں کے بچے یہاں دینی تعلیم حاصل کرسکیں۔انہوں نے کہا کہ ہمارا فرض بنتا ہے کہ ہم اللہ کے گھروں کو آباد رکھیں۔ثمر خان نے اپنا فون نمبر 646-403-7950بتاتے ہوئے کہا کہ جو لوگ عطیات دیناچاہتے ہیں وہ اس نمبر پر مجھ سے رابطہ کر سکتے ہیں۔افطار ڈنر کے موقع پر عالم اسلام کیلئے خصوصی دعا کی گئی اور پاکستان کی سالمیت اور پاکستان میں بسنے والے پاکستانیوں اور بالخصوص امریکہ میں بسنے والے تمام پاکستانیوں کیلئے رمضان کے اس مقدس مہینے میں خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔پاکستانی کمیونٹی اور مختلف علاقوں سے آئی ہوئی مختلف فیملیز نے محمدثمر کی ان کاوشوں کی تعریف کی اور مکمل تعاون کی یقین دہانی بھی کرائی۔

TT Ads

Leave a Reply

Your email address will not be published.